خوفناک شیر

ایک شخص نے خواب میں دیکھا کہ وہ کسی جنگل میں چلا جارہا ہے اتنے میں پیچھے سے آہٹ محسوس ہوئی، مڑ کر دیکھا تو ایک خوفناک شیر اس کے تعاقب میں چلا آرہا ہے، وہ گھبرا کر بھاگ کھڑا ہوا، شیر بھی پیچھے دوڑا، اتنے میں ایک گہرا گڑھا آڑے آگیا، اس نے گڑھے میں جھانک کر دیکھا تو اندر ایک بہت بڑا سانپ منہ کھولے بیٹھا نظر آیا۔ اب یہ بہت ڈرا کہ کرے تو کیا کرے۔ آگے خطرناک سانپ ہے تو پیچھے خوفناک شیر اتنے میں اسے ایک درخت نظر آیا، یہ اس کی ٹہنی سے لٹک گیا لیکن ایک نئی مصیبت کھڑی ہو گئی، وہ یہ کہ ایک سفید اور سیاہ چوہا دونوں مل کر اس ٹہنی کی جڑ کو کتر رہے ہیں۔ اب تو یہ بہت گھبرایا کہ عنقریب یہ دونوں چوہے ٹہنی کاٹ ڈالیں گے اور میں گر جائوں گا اور پھر شیر اور سانپ کا لقمہ بن جائوں گا۔ ابھی وہ اسی تردد میں تھا کہ اس کی نظر شہد کے چھتے پر پڑی اور وہ شہد پینے میں مشغول ہو گیا اور شہد کی لذت میں کچھ ایسا گم ہوا کہ نہ شیر و سانپ کا خوف رہا، نہ ہی دونوں چوہوں کا ڈر۔ اچانک ٹہنی جڑ سے کٹ گئی اور یہ دھڑام سے نیچے گرا، شیر اس پر جھپٹا اور اس نے چیر پھاڑ کر گڑھے میں گرا دیا اور سانپ اس کو نگل گیا۔