انڈیا کا اصل چہرہ

بھارت جسے دراصل کافرستان کہا جائے تو کچھ غلط نہیں ہے۔ پاکستان کی آزادی کو 66 برس گزر چکے ہیں مگر ہندو کو مسلمان کی آزادی ایک آنکھ بھی نہیں بھائی اور جب سے لے کر آج تک کافرستان نے پاکستان کو نقصان پہنچانے کا ایک بھی موقع ضائع نہیں کیا۔ کبھی رات کے اندھیرے میں ہم پر حملہ کردیا جس کی مثال 1965 کی جنگ ہے جس میں انڈیا نے منہ کی کھاَئی۔ 1965 کی شکست میں لگے ہوئے زخم انڈیا آج تک چاٹ رہا ہے اور کبھی نہیں بھول سکے گا۔ جب بھارت کے اس طرح کے سارے حربے ناکارہ ہوگئے اور انڈیا کو یقین ہو گیا کہ اس طرح پاکستان جیسی چٹان کو ہرانا ناممکن ہے تو ہندو بنیے نے نئے نئے طریقے سوچے اور پاکستان پر کچھ دوسری طرح سے حملہ آور ہوا۔

ایک طریقہ تو میڈیا ہے۔ انڈیا نے ہم پر میڈیا کی جنگ مسلط کر دی۔ پہلے پہل تو اپنی گھٹیا فلموں اور ڈراموں کی شکل میں ہماری نوجوان نسل کو نشانہ بنایا۔ اس سے کچھ خاطر خواہ فائدہ نہ ہوا۔ پاکستان کے لوگوں نے کافی حد تک انڈین ڈراموں اور فلموں کو نظر انداز کرنا شروع کر دیا تو انڈیا نے پاکستان میں موجود میڈیا کو خرید لیا اور پاکستانی چینلز پر بھارتی غلیظ فلمیں اور ڈرامے دکھائے جانے لگے۔

دوسرا طریقہ یہ تھا کہ ہر ممکن کوشش کر کے پاکستان کو پوری دنیا میں بدنام کر دیا جائے۔ اگر آپ پچھلے چند سالوں کے کچھ واقعات پر نظر ڈالیں تو آپ کو بخوبی اندازہ ہو جائے گا کہ بھارت کس طرح سے دن رات پاکستان کے خلاف کام کررہا ہے۔ میں ان واقعات میں سے کچھ کا ذکر کر رہا ہوں تاکہ پڑھنے والوں کو اندازہ کرنے میں آسانی رہے۔

1 تین مارچ 2009 کو بھارتی ایجنسی راء نے سری لنکا کی کرکٹ ٹیم پر لاہور میں حملہ کروایا جب سری لنکا کی ٹیم پاکستان میں کرکٹ کے دورے پر تھی تاکہ پاکستان میں بین الاقوامی کرکٹ بند کر دی جائے اور پاکستان کو بدنام بھی کیا جائے۔ جس میں انڈیا کو کامیابی ہوئی اور ابھی تک پاکستان میں بین الاقوامی کرکٹ بند ہے۔

2 سال 2008 میں بمبئی پارلیمنٹ میں ہونے والے حملوں میں بھی بھارت کی اپنی حکومت اور ان کی ایجنسی راء کا ہاتھ تھا۔ اس کا الزام بھی پاکستان پر مسلط کیا گیا تاکہ پاکستان کو بدنام کیا جاسکے۔ اب یہ بات ثابت ہو چکی ہے کہ بھارت نے خود ہی یہ سب کچھ کروایا تھا آپ ثبوت کے لیے نیچے دیے گئے لنک پر کلک کر کے دیکھ سکتے ہیں۔

http://dawn.com/news/1028989/indian-govt-behind-parliament-mumbai-attacks-claims-former-cbi-official

3 کارگل میں ہونے والی جنگ جس کو پاکستان نے جیتا تھا اور دشمن کو منہ توڑ جواب دیا تھا مگر بھارت نے میڈیا کے ذریعے یہ ثابت کرنے کی کوشش کی کہ انہوں نے پاکستان کو بہت نقصان پہنچایا ہے اور یہ معرکہ جیتا ہے اور پاکستان کو خوب بدنام کیا۔ جبکہ حقیقت میں پاکستانی فوج کے عظیم جوانوں نے یہ جنگ جیتی تھی اور دشمن کے 500 سے زائد فوجیوں کو جہنم رسید کیا تھا۔ میں یقین سے کہہ سکتا ہوں کہ انڈیا کا یہ زخم کبھی نہیں بھر سکتا۔

اس طرح کے بے شمار واقعات ہیں جن سے ہم یہ بات وثوق سے کہہ سکتے ہیں کہ انڈیا ہمیشہ پاکستان کا دشمن تھا، دشمن ہے اور دشمن رہے گا۔

پاکستان میں موجود چند غداروں کی مدد سے بھارت ہمارا کچھ نہیں بگاڑ سکتا۔ جس ملک کو اللہ نے ایک مخصوص مقصد کے لئے بنایا ہو وہ اس غلیظ اسلام دشمن کے ہاتھوں کیسے فنا ہو سکتا ہے۔ اسلام دشمن ہندو شائد یہ بات نہیں جانتے کے اگر پاکستانی مسلمان اپنی ضد پر آگیا تو پورے ہندوستان پر جب تک پاکستانی پرچم نہ لہرا دے تو سکھ کا سانس نہیں لے گا۔ شاید وہ یہ نہیں جانتا کہ ہماری تاریخ میں حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم، حضرت عمر رضی اللہ تعالی عنہ، ٹیپو سلطان جیسے عظیم سپہ سالار گزرے ہیں جنہوں نے ایسی ایسی تاریخ رقم کی ہے جنہیں اگر ہندو بنیا سمجھ لے تو چوہے کی طرح اپنے بل میں منہ چھپا لے۔

اگر انڈیا یہ سمجھتا ہے کہ تین گناہ زیادہ فوج رکھ لینے سے وہ پاکستان کا کچھ بگاڑ سکتا ہے تو وہ غلط ہے کیوں کہ پاکستان کی سر زمین کی مائوں نے جو سورما پیدا کیے ہیں ان کی پہلی خواہش ہی یہی ہوتی ہے کہ انہیں شہادت کی موت ملے۔ یہ جذبہ انڈین ہندو فوجی کہاں سے لائیں گے؟

اگر انڈیا اپنے ایٹمی ہتھیاروں پر ناز کرتا ہے تو وہ بھی اس کی خوش فہمی ہے۔ پاکستان کے پاس موجود میزائل ٹیکنالوجی انڈین ٹیکنالوجی سے کہیں آگے ہے۔ اس کی یہ خوش فہمی تو میدان جنگ میں ہی ختم ہو گی۔

جنگ کا آغاز انڈیا کرے گا مگر اس کا اختتام ہم کریں گے، انڈیا کو سر زمین سے مٹا کر۔

انڈیا خود کس قابل ہے اور انڈیا میں کیا کچھ ہوتا ہے۔ میرے پاس چند تصاویر ہیں جنہیں میں نیچے دکھا رہا ہوں۔

اللہ میرے اس عظیم ملک کو رہتی دنیا تک قائم رکھے اور میرے ملک کو دشمنوں کو ملیا میٹ کردے آمین۔

Indian poor

indian woman

hqdefault

Water hole in Indian Gujrat

Pathetic_state_of_Womenfolk_waiting_for__C0D041BB-E7D1-DF11-C90D88ACBBA52276